مجبوری میں اداکار بنا، جونی ڈیپ کا انکشاف

امریکہ (ویب ڈیسک)نامور امریکی اداکار جونی ڈیپ نے اپنے متعلق بتایا تھا کہ وہ اپنی مجبوری کی وجہ سے حادثاتی طور پر اداکار بنے تھے۔حال ہی میں سابقہ اہلیہ ایمبر ہیرڈ پر ہتک عزت کا کیس جیتنے والے جونی ڈیپ نے ماضی میں اپنے فلم نگری میں آنے کے حوالے سے دلچسپ انکشاف کرچکے ہیں۔

Almarah Advertisement

کچھ سال قبل ریڈیو پروگرام میں شرکت کے دوران جونی ڈیپ کا کہنا تھا کہ جس وقت وہ موسیقار بننا چاہتے تھے تو اس وقت وہ اداکاری میں آ پھنسے۔ان کا کہنا تھا کہ انہیں بچپن سے ہی موسیقار بننے کا شوق تھا، انہوں نے 12 سال کی عمر میں باقاعدہ موسیقی کا آغاز کیا جبکہ کلبز میں 13 برس کی عمر میں پرفارم بھی کرنا شروع کردیا تھا۔جونی ڈیپ نے بتایا کہ “مجھے اپنا کرایہ ادا کرنا تھا اور پھر کسی نے مجھے کہا کہ ‘آپ میری ایجنٹ سے جاکر کیوں نہیں ملتے؟ وہ نکولس کیج کے ساتھ ہے،’ لہٰذا انہوں نے مجھے آڈیشن کے لیے بھیجا اور مجھے کام مل گیاہالی ووڈ اسٹار نے اس لمحے سے متعلق بتایا کہ مجھے وقتی طور پر اپنا کرایہ اداکرنے کے لیے یہ ٹھیک لگا تھا۔ خیال رہے کہ ’پائیریٹس آف دا کیریبئن‘ میں کیپٹن جیک اسپیرو کے کردار سے شہرت کی بلندی پر پہنچنے والے جونی ڈیپ نے فنی کیریئر کا آغاز 1984 میں 21 برس کی عمر میں فلم “اے نائٹ میر آن ایلم اسٹریٹ” سے کیا تھا۔دوسری جانب بالی ووڈ کے ہدایت کار انوراگ کشپ نے اداکارہ تاپسی پنوں کے موازنے پر انکشاف کیا ہے کہ اکشے کمار دنیا کے چھٹے امیر ترین اداکار ہیں۔ تاپسی پنوں اور انوراگ کشپ اپنی فلم ’دوبارہ‘ کی تشہر میں مصروف ہیں، اس دوران انٹرویو میں اداکاہ نے اکشے کمار سے اپنا موازنہ کیا۔ تاپسی پنوں نے کہا کہ وہ بھی اکشے کمار کی طرح بہت ساری فلمیں کر رہی ہیں،

مجھے شکایت ہے کہ ہم دونوں کو یکساں چیک نہیں ملتے، وہ زیادہ کماتے ہیں۔ اس دوران انوراگ کشپ نے انکشاف کیا کہ اکشے کمار اس وقت دنیا کے چھٹے امیر ترین اداکار ہیں۔ فلم دوبارہ 19 اگست کو سینما گھروں کی زنیت بنے گی، فلم کے ہدایت کار انوراگ کشپ ہیں جبکہ اسے ایکتا کپور نے پروڈیوس کیا ہے۔ فلم من مرضیاں (2018ء) اور سانڈھ کی آنکھ (2019ء) کے بعد انوراگ اور تاپسی کی ایک ساتھ یہ تیسری فلم ہے۔ انٹرویو کے دوران تاپسی سے پوچھا گیا کہ ایک ٹوئٹ میں کسی نے انہیں لیڈی اکشے کمار کہا گیا تھا، جو بہت ساری فلمیں کررہی ہے۔