Categories
انٹرنیشنل

امریکہ میں اہم عہدے کے لیے انتخابی مہم : ہیلری کلنٹن کس پاکستانی شخصیت کی انتخابی مہم کا حصہ بن گئیں ؟ جانیے

واشنگٹن (ویب ڈیسک) امریکا کی سابق صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن نے اپنا سیاسی وزن پاکستانی امریکن ڈاکٹر آصف محمود کے پلڑے میں ڈال دیا ہے اور ان کی انتخابی مہم کا فعال حصہ بن گئی ہیں۔ہیلری رادھم کلنٹن نے ڈاکٹر آصف محمود کے لیے 27 جولائی کو فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام کیا ہے، یہ تقریب نیویارک میں ہو گی۔

سابق صدارتی امیدوار کی جانب سے انفرادی طور پر یہ ناصرف کسی بھی پاکستانی امریکن بلکہ کسی بھی ایشیائی اور مسلم امیدوار کے لیے اپنی نوعیت کی پہلی فنڈ ریزنگ تقریب ہے۔ہیلری سابق صدر بل کلنٹن کی اہلیہ ہیں اور ڈیموکریٹ پارٹی کی سرکردہ ترین شخصیات میں سے ایک ہیں، جن کا ڈاکٹر آصف محمود سے ایک عشرے سے سیاسی تعلق ہے۔ڈاکٹر آصف محمود نے ہیلری کلنٹن کی صدارتی انتخابی مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا تھا اور مختلف ریاستوں میں فنڈ ریزنگ کر کے ری پبلکن ڈونلڈ ٹرمپ کے مقابل ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار کے لیے 3 ملین ڈالر سے زائد رقم جمع کی تھی، جس میں سے زیادہ تر رقم غیر مسلم ڈونرز کی مدد سے حاصل کی گئی تھی۔ہیلری کلنٹن کے ڈاکٹر آصف محمود سے تعلق کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ صدارتی الیکشن کے نتائج سامنے آنے کے بعد ہیلری کلنٹن نیویارک میں اپنی انتخابی مہم کے ہیڈ کوارٹر میں جب اسٹیج سے اتری تھیں تو وہ سب سے پہلے ڈاکٹر آصف محمود ہی سے گلے ملی تھیں اور انتخابی مہم میں شب و روز ایک کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا تھا۔کیلی فورنیا کے ڈسٹرکٹ فورٹی سے کانگریس کے امیدوار ڈاکٹر آصف محمود کی انتخابی مہم کے سلسلے میں اب ہیلری کلنٹن خود فنڈ جمع کر رہی ہیں اور اس کے لیے انہوں نے ڈیمو کریٹ پارٹی کے سرکردہ افراد کو دعوت دی ہے۔ڈاکٹر آصف کے لیے نیویارک میں تقریب اس لیے اہم ہے کیونکہ ان کا جس ری پبلکن حریف یونگ کم سے مقابلہ ہے وہ اپنی انتخابی مہم پر پیسہ پانی کی طرح بہا رہی ہیں، صرف پرائمری یعنی حلقے میں سرِفہرست امیدوار بننے کی دوڑ ہی میں یونگ کم نے امریکی تاریخ کی سب سے بڑی رقم یعنی 50 لاکھ ڈالر خرچ کیے تھے، تاہم وہ ڈاکٹر آصف کی مقبولیت کم کرنے میں ناکام رہی تھیں۔ڈاکٹر آصف یہ الیکشن جیتے تو امریکن پاکستانیوں کے لیے سیاسی میدان میں فعال ہونے کی نئی راہیں کھلنے کا امکان بڑھ جائے گا۔