کون کتنے اثاثوں کا مالک ہے بالآخر پتا چل گیا۔۔۔الیکشن کمیشن نے ارکان پارلیمنٹ کے اثاثوں کی حقیقت واضح کر دی

لاہور(ویب ڈیسک) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ارکان پارلیمنٹ کے سال 2021 کے اثاثوں کی تفصیلات جاری کر دیں۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ دستاویز ات کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف 24 کروڑ 50 لاکھ سے زائد اثاثوں کے مالک اور 14 کروڑ سے زائد کے مقروض ہیں، شہباز شریف نے

سلمان شہباز سے 6 کروڑ سے زائد کا قرض لے رکھا ہے، شہباز شریف کے پاس دو گاڑیاں، بینک بیلنس 2 کروڑ سے زائد کا ہے، شہباز شریف بیرون ملک 13 کروڑ 74 لاکھ روپے کے اثاثوں کے بھی مالک ہیں۔شہباز شریف نے اپنی بیویوں نصرت شہباز اور تہمینہ درانی کے اثاثے بھی ڈکلئیر کر دیے، نصرت شہباز 23 کروڑ روپے کے اثاثوں کی مالک ہیں، تہمینہ درانی کے اثاثوں کی ملکیت 57 لاکھ 60 ہزار ہے، شہباز شریف کے اثاثوں میں سال 2020 کی نسبت 2021 میں 3 لاکھ روپے کی کمی آٗئی۔ دستاویز کے مطابق بلاول بھٹو 1 ارب 60 کروڑ روپے کے اثاثوں کے مالک ہیں، بلاول بھٹو کے ذمہ 3 لاکھ 34 ہزار واجب الادا ہیں،بلاول بھٹو نے بیرون ملک اپنے کاروبار بھی ظاہر کیے ہوئے، بلاول بھٹو کا بینک بیلنس 12 کروڑ سے زائد کا ہے۔ آصف علی زرداری 71 کروڑ 42 لاکھ سے زائد اثاثوں کے مالک ہیں، آصف زرداری کا بیرون ملک کوئی کاروبار نہیں ہے۔ مراد سعید کے اکاونٹس میں 29 لاکھ 63 ہزار سے زائد کی رقم ہے، مراد سعید کے پاس ایک گاڑی اور 15 تولہ سونا ہے،مراد سعید کا کوئی اپنا گھر نہیں۔ عمر ایوب ایک ارب 19 کروڑ سے زائد کے اثاثوں کے مالک ہیں، اُن کے ذمہ 11 لاکھ 55 ہزار روپے واجب الادا ہیں، عمر ایوب نے بیرون ملک بزنس کی تفصیلات بھی جمع کرائیں۔ سابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر ساڑھے 8 کروڑ سے زائد اثاثوں کے مالک، ایک کروڑ 17 لاکھ سے زائد کے مقروض ہیں،اُن کے پاس 6 کروڑ 72 لاکھ سے زائد کی جائیداد ہے، اسد قیصر نے 58 لاکھ روپے کا بزنس ظاہر کیا ، اسد قیصر ایک گاڑی اور 96 لاکھ سے زائد رقم بینک بیلنس کے مالک بھی ہیں۔ پرویز خٹک 16 کروڑ 71 لاکھ کے زائد کے اثاثوں کے مالک ہیں، 3 کروڑ روپے بینک بیلنس اور 2 کروڑ 56 لاکھ روپے کے مقروض ہیں۔