وزیر اعظم شہباز شریف کے پاس اسمبلی توڑنے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں،سینئر صحافی طلعت حسین بڑا انکشاف کر دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) اینکر پرسن طلعت حسین کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم شہباز شریف کے پاس اب اسمبلی توڑنے کے علاوہ کوئی عملی راستہ باقی نہیں بچا۔ اپنے ایک ٹویٹ میں طلعت حسین نے لکھا “نواز شریف نے عمران خان کی “تباہ کن” پالیسیوں کی سیاسی قیمت چکانے سے انکار کر دیا۔ اب شہباز شریف کے پاس، جو بطور وزیراعظم ویسے ہی

Almarah Advertisement

بے اثر و بے سمت نظر آ رہے تھے، اسمبلی تحلیل کرنے کے علاوہ اور کوئی خاص عملی راستہ شاید موجود نہیں۔ پنجاب بھی نئے انتخابات کی طرف جاتا نظر آ رہا ہے۔” خیال رہے کہ موجودہ حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے سے انکار کیا ہے۔ مخلوط حکومت کی سب سے بڑی جماعت مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کا کہنا ہے کہ حکومت معیشت بحال کرنے کے لیے سخت اقدامات پر تیار ہے مگر اس کی ایک سیاسی قیمت بھی ہے، وہ سیاسی قیمت ن لیگ اکیلے ادا کرنے کو تیار نہیں ہے، اگر یہ قیمت تمام اتحادی مل کر ادا کریں گے تو ہم تیار ہیں۔ دوسری طرف وزیراعظم شہباز شریف نے اتحادی جماعتوں کے سربراہوں کا اجلاس آج بلالیا۔ ذرائع کا بتانا ہے کہ اجلاس میں ملک کی معاشی و سیاسی صورتحال کے بارے میں اہم فیصلے متوقع ہیں جب کہ وزیر اعظم شہباز شریف دو تین روز میں قوم سے خطاب بھی کرسکتے ہیں۔ شہبازشریف کی قیادت میں (ن) لیگ کے وفد نے لندن میں تین روز تک سابق وزیراعظم میاں نوازشریف سے مشاورت کی تھی۔ وزیراعظم شہبازشریف برطانیہ اور یواے ای کا دورہ مکمل کرکے گزشتہ روز وطن واپس پہنچے ہیں