Categories
پاکستان

بس بہت ہوگیا!!!! قانون حرکت میں آئے گا تو چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ حمزہ شہباز نے عمران خان کو خبردار کر دیا

لاہور: (ویب ڈیسک) وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ عمران خان غلط فہمی میں نہ رہے کہ ہمیں دباؤ لے میں آئے گا، جب قانون حرکت میں آئے گا تو تمہیں چھپنے کی جگہ بھی نہیں ملے گی۔ وزیراعلی پنجاب حمزہ شہباز نے عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ

عمران خان کسی غلط فہمی میں ہیں کہ وہ ہمیں دباؤ میں لے آئیں گے، ہم صرف اللہ کا دباؤ قبول کرتے ہیں یا اپنی عوام کا، عمران نیازی کو آج خبردار کرتا ہوں کہ آپ آئین اور عدالت کے فیصلوں کو نہیں مانتے اور اداروں کا مذاق اڑاتے ہیں، ن لیگ تمہاری طرح انتقام تو نہیں لے گی لیکن قانون کو حرکت میں لا کر تمہیں قانون کا احترام ضرور سکھائے گی۔ حمزہ شہباز نے کہا کہ تم نے اپوزیشن کو ناحق جیل میں ڈالا تھا جبکہ تمہارے خلاف باقاعدہ ثبوت موجود ہیں، جب قانون حرکت میں آئے گا تو تمہیں چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے کہا کہ لوڈشیڈنگ کو مکمل کنٹرول کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، لوڈشیڈنگ کے جن کو ہم نے بوتل میں بند کر دیا تھا لیکن سابقہ حکومت کی نااہلیاں سامنے آ رہی ہیں، ہم لوڈشیڈنگ اور مہنگائی سمیت ہر ایشو پر حقائق قوم کے سامنے رکھیں گے اور دن رات کام کر کے ان مسائل سے چھٹکارا پائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کل انتظامیہ نے 3 گھنٹے تحریک انصاف کے ساتھ مذاکرات کیے کیونکہ سیالکوٹ میں جلسے کے مقام پر مسیحی برادری کو تحفظات ہیں، انتظامیہ نے تحریک انصاف کو متبادل جگہ کی پیشکش کی لیکن انہوں نے ہٹ دھرمی کی دراصل عمران نیازی خون خرابہ چاہتا ہے۔ ادھر وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ ریاست ہر صورت اپنی اقلیتوں کا تحفظ کرے گی اور انکے مذہبی مقامات کو سیاسی مقاصد کیلئے استعمال نہیں ہونے دیگی۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے سلسلہ وار ٹویٹس میں انہوں نے لکھا کہ خونی مارچ والوں نے آج سیالکوٹ میں گرجا گھر پر حملہ کیا۔ عمران نیازی پہلے توہین مسجد نبوی کا مرتکب ہوا اور آج اس نے گرجا گھر کو جلسہ گاہ بنانے کی کوشش کر کے مسیحی برادری کے مذہبی جذبات کو اکسایا ہے۔ وفاقی وزیر داخلہ نے لکھا کہ ریاست مدینہ کا نام لیکر اپنی سیاسی دکان چمکانے والا عمران نیازی ملک میں مذہبی انتشار پھیلا رہا ہے۔ پی ٹی آئی چیئر مین ریاست پاکستان کے لئے خطرہ بن چکا ہے۔ اس کے شر سے نہ کوئی ادارہ محفوظ ہے اور نہ کوئی مسجد اورکوئی گرجا گھر۔ انہوں نے کہا کہ گرجا گھر کی جگہ جلسہ کر کے فسطائی ذہنیت کا بنی گالا میں بیٹھا ہوا ایک شخص مسیحی برادری پر اپنی حاکمیت جتانا چاہتا ہے۔ عمران نیازی اپنی مذموم حرکت سے مذہبی اقلیتوں کا کیا پیغام دینا چاہتا ہے۔ ریاست ہر صورت اپنی اقلیتوں کا تحفظ کرے گی اور انکے مذہبی مقامات کو سیاسی مقاصد کیلئے استعمال نہیں ہونے دیگی۔ چرچ کی جگہ کو سیاسی جماعت کے جلسہ گاہ کی اجازت نہ دینے کے مسیحی برادری کے فیصلے کو ریاستی تحفظ دینا قانونی اداروں کی ذمہ داری ہے۔ رانا ثناء اللہ نے لکھا کہ ریاست پاکستان کسی بھی جماعت کو دھونس اور زبردستی سے ملک میں ملوکیت نافذ کرنے کی ہر گز اجازت نہیں دے سکتی۔ میں عمران نیازی کو خبردار کرتا ہوں کہ ملک کے کسی بھی حصے میں نقض امن پیدا کرنے کی صورت میں قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔