عمران خان کی ایک اور پیشگوئی سچ ثابت،شہباز شریف نے نیب قوانین سے متعلق بڑا قدم اٹھانے کا فیصلہ کر لیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیراعظم شہباز شریف نے بیوروکریسی کی کا رکردگی کو بہتر بنا نے کیلئے متعلقہ قوانین میں تبدیلیاں اور ضروری ریفارمز لانے کا فیصلہ کیا ہے۔نجی نیوز چینل نے ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہے کہ وزیراعظم شہبازشریف نے ہائی پاور کمیٹی تشکیل دینے کی منظوری دے دی ہے۔ ہائی پاور کمیٹی کے سربراہ سابق سینئر بیوروکریٹ ناصر محمود کھوسہ ہونگے

Almarah Advertisement

کمیٹی قوانین میں ضروری تبدیلیوں کے بارے میں تجاویز دیگی۔ کمیٹی میں سابق چیف سیکریٹریز، سابق وفاقی سیکریٹریز، سابق آئی جیز شامل ہونگے۔ کمیٹی کے دیگر اراکین کا تعین کمیٹی سربراہ ناصر محمود کھوسہ خود کریں گے۔ کمیٹی کسی بھی محکمے سے متعلق کارکردگی کا جائزہ لے کر سفارش کرسکے گی۔ وزیر اعظم نے ہدایت کی ہے کہ ہائی پاور کمیٹی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد تجاویز فراہم کرے۔ وزیراعظم شہبازشریف کی ہدایت کے مطابق بیورو کریسی کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے نیب قوانین سمیت دیگر رولز میں تبدیلیاں لائی جائیں گی، ہائی پاور کمیٹی کو مکمل اختیار ہوگا کہ وہ کسی بھی محکمے سے متعلق کارکردگی کا جائزہ لیکر سفارش کرسکتی ہے۔ ذرائع کے مطابق ہائی پاور کمیٹی بنانے کا فیصلہ بیوروکریٹس کے تحفظات سمیت دیگر مسائل کو دیکھتے ہوئے کیا گیا ہے، کمیٹی بیوروکریسی کے تحفظات اور دیگر مسائل کا جائزہ لے کر ان کے تحفظات ختم کرنے بارے تجاویز دے گی۔ نیب قوانین سمیت دیگر قوانین اور آرڈیننس میں ضروری تبدیلیوں سے متعلق تجاویز دے گی، جب کہ کمیٹی ریفارمز لانے سے متعلق پلاننگ بھی تشکیل دیکر آگاہ کرے گی اور وفاق و پنجاب میں سینئر بیوروکریٹس کی کارکردگی سمیت دیگر اقدامات پر بھی تجاویز دے سکتی ہے۔یاد رہے کہ اس سے قبل عمران خان کئی بار جلسوں اور انٹرویوز میں اس خدشے کا اظہار کر چکے ہیں کہ شریف خاندان جب بھی اقتدار میں آئے گا تو سب سے پہلے نیب قوانین کو کمزور کرنے کی سازش کرے گا ،جس کا مقصد اپنے چہیتوں اور خاندان والوں کے کیسز ختم کرنا ہوگا،عمران خان متعدد بار حکومت کو اس بات پت تنقید کا نشانہ بنا چکے ہیں کہ نیب زدہ سیاستدانوں کی حکومت مین کوئی جگہ نہیں ۔نیب زدہ سیاستدان حکومت یہاں کرتے ہیں مال بناتے ہیں اور باہر بھاگ جاتے ہیں۔ان کے تمام اثاثے باہر ہیں ،حتیٰ کہ ان کی آل اولاد بھی باہر موجود ہے۔