حمزہ شہباز کی تقریب حلف برداری!!! کیپٹن(ر) صفدر کے لیے صوفہ نہ ارینج ہوسکا، موصوف کو کہاں بیٹھنا پڑ گیا؟

لاہور ( نیوز ڈیسک ) حمزہ شہباز کی حلف برداری تقریب میں کیپٹن صفدر کی سٹول پر بھیٹنے کی تصویر سوشل میڈیا پر وائر ہوگئی ہے۔ کیپٹن صفدر کوبیٹھنے کے لیے صوفہ نا ملا، تقریب حلف برداری میں اگلی صف میں بیٹھے کیپٹن صفدر سٹول پر بیٹھے گئے۔ صحافی نوشین یوسف نے مریم صفدر اور دیگر کے ہمراہ بیٹھے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے بارے میں کہا کہ ان کے

لیے بھی صوفہ ہونا چاہیے تھا۔اسٹول پر بٹھانا نامناسب ہے۔کسی نے لکھا کہ امریکی سازش میں کیپٹن صفدر شامل نہیں اس لیے صوفہ نہیں دیا گیا۔کچھ دیر قبل پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماء حمزہ شہباز نے وزیراعلیٰ پنجاب کے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔ گورنر ہاؤس پنجاب کے سبزہ زار میں ہونے والے حلف برداری کی تقریب میں لاہور ہائی کورٹ کے حکم پر اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے حمزہ شہباز سے عہدے کا حلف لیا ، اس دوران مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز ، ن لیگی رہنماء کیپٹن ر صفدر ، وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ سمیت وفاقی وزراء ، ڈپٹی اسپیکر پنجاب اسمبلی دوست محمد مزاری اور مہمانوں سمیت مسلم لیگ ن کے کارکنوں کی بڑی تعداد گورنر ہاؤس میں موجود تھی ، ن لیگی کارکنوں کی جانب سے اس موقع پر نعرہ بازی بھی کی گئی۔خیال رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ ن کے رہنما حمزہ شہباز سے وزیرِ اعلی پنجاب کا حلف نہ لینے کے خلاف تیسری درخواست پر محفوظ کیا گیا فیصلہ سناتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ نے اسپیکر قومی اسمبلی کو حمزہ شہباز سے کل حلف لینے کا حکم دیا تھا ، اس سلسلے میں اسپیکر قومی اسمبلی کو ہدایت کی گئی تھی کہ بروز ہفتہ صبح 11 بجے حمزہ شہباز سے حلف لیں گے۔بعد ازاں لاہور ہائیکورٹ کے اس فیصلے کے خلاف پی ٹی آئی کی جانب سے ایک انٹرا کورٹ اپیل دائر کی گئی جس میں موقف اپنایا گیا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ کو پارلیمانی معاملات میں مداخلت کا اختیار نہیں ‘ ہائی کورٹ کا 29 اپریل کا حکم آئین کے مطابق نہیں‘ سنگل بینچ کے فیصلے میں صدر اور گورنر کے خلاف ریمارکس دیے گئے جب کہ آئین کے تحت صدر اور گورنر کسی عدالت کو جوابدہ نہیں ، اس لیے لارجر بینچ سنگل بینچ کے فیصلے کو کالعدم قرار دے ۔بتایا گیا ہے کہ انٹرا کورٹ اپیل میں وفاقی اور صوبائی حکومت کو فریق بناتے ہوئے کہا گیا ہے کہ گورنر ہاؤس میں مسلم لیگ ن نے پولیس کو داخل کرایا۔ لاہور ہائی کورٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے تحریکِ انصاف کے وکیل اظہر صدیق نے کہا کہ ہائی کورٹ کے دفاتر کھل چکے ہیں ، رات کو اپیل دائر کرنے کی کوشش کی لیکن کامیابی نہ ہوئی ، اب اپیل دائر کی جا چکی ہے ، آج ہی سماعت کی استدعا کی ہے ، لاہور ہائی کورٹ کے تینوں فیصلے ایک دوسرے سے مختلف ہیں ، پچھلے فیصلوں میں صدر اور گورنر کو نوٹس نہیں ہوئے، آئینی طور پر اب حلف نہیں ہو سکتا ۔