شریف خاندان کا دفاع! حامد میر جمائما گولڈ سمتھ سے اُلجھ پڑے، عمران خان کی سابقہ اہلیہ کو کیا کچھ کہہ دیا؟

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )سابق وزیراعظم عمران خان کی سابقہ اہلیہ جمائما اور سینئر صحافی و اینکر پرسن حامد میر کے درمیان ٹویٹر پر نوک جھونک ہو گئی ۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جمائما گولڈ سمتھ نے لکھا کہ ’’میرے گھر کے باہر مظاہرے میں میرے بچوں کو نشانہ بنانا بنیا جا رہا ہےایسا لگتا ہے جیسے میں 90ء کی دہائی کے لاہور میں واپس آگئی

Almarah Advertisement

ہوں۔اس پر سینئر اینکر پرسن حامد میر نے ٹویٹ کیا اور کہا کہ نہ تو تحریک انصاف کے کارکنان کو چاہیے کہ وہ نواز شریف کے گھر کے باہر احتجاج کریں اور نہ ن لیگ کے کارکنان کو ایسا کرنا چاہیے ، شیشے کے گھروں میں رہنے والوں کو دوسروں پر پتھر نہیں پھینکنا چاہیں۔حامد میر کے اس ٹویٹ پر جمائما کا کہنا تھاکہ فرق صرف یہ ہے کہ میراور میرے بچوں کا پاکستان سیاست سے کوئی تعلق نہیں وہ عام شہری کی طرح سوشل میڈیا تک استعمال نہیں کرتے اس پر حامد میر نے انہیں جواب دیا کہ نواز شریف کی فیملی میں بھی بہت ساری خواتین ہیں جن کا سیاست سے کوئی تعلق نہیں ہے لیکن وہ اس طرح کے حالات کا سامنا کر رہی ہیں ، کم از کم خواتین کو ہراساں کرنے کی مذمت کریں ۔ دوسرا آپ کے بھائی کو پاکستانی سیاست سے بھی دور رہنا چاہیے جو مداخلت کر رہا ہے ۔ واضح رہے کہ عمران خان کی سابقہ اہلیہ اور برطانوی پروڈیوسر جمائما گولڈ اسمتھ نے لندن میں اپنے گھر کے باہر مظاہرے کیے جانے کا دعویٰ کیا ہے۔جمائما گولڈ اسمتھ نے ٹوئٹر پر ایک تصویر شیئر کی جس میں عمران خان اور ان بچوں کی تصویر پر مائنس سائن لگاتے ہوئے ان کے خلاف ٹوئٹ واضح ہیں۔جمائما نے ٹوئٹ میں لکھا کہ ان کے گھر مظاہروں کا اعلان کیا گیا جس میں بچوں کو ہدف تنقید بنایا جا رہا ہے، انھیں سوشل میڈیا پر یہود دشمنی کا سامنا ہے۔عمران خان کی سابقہ اہلیہ نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہاایسا لگتا ہے جیسے میں 90 کی دہائی کے لاہور میں ہوں۔ جمائما نے اپنی ٹوئٹ میں پرانا پاکستا ن کا ہیش ٹیگ بھی استعمال کیا۔