توانائی بحران ،وزیر اعظم کا نیا دعویٰ سامنے آگیا

(ویب ڈیسک )وزیراعظم نوازشریف نے وفاقی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ سیاسی مخالفین ملک کو تیزی سے ترقی کرتا نہیں دیکھنا چاہتے۔ دیگر چیلنجز کی طرح پانامہ لیکس میں بھی سرخرو ہوں گے۔ وزراء کو عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کی ہدایت بھی کردی۔
(جاری ہے...)

وزیر اعظم نواز شریف کی صدارت میں کابینہ کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے آئندہ مالی سال کے لئے بجٹ حکومت عملی دستاویز پیش کی۔ کابینہ اجلاس کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ چینی کونسل نے سکھر ملتان اورحویلیاں تھاکوٹ موٹر وے کے لیے چار اعشاریہ پانچ ارب ڈالر منظور کرلئے ہیں۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ ملک کی معیشت تیزی سے آگے بڑھ رہی ہے۔ عالمی ادارے پاکستان میں معاشی بہتری کو تسلیم کررہے ہیں، جبکہ کچھ سیاسی حریف پاکستان کو معاشی عروج سے دور رکھنے میں کوشاں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ حریف جانتے ہیں کہ اگر حکومت کے ترقیاتی منصوبے کامیاب ہو گئے تو انھیں دوہزار اٹھارہ میں ناکامی ہو گی۔ وزیراعظم نے کہا کہ گوادر ترقی کا گڑھ ہے۔ انیس سو ننانوے سے اب تک گزشتہ حکومتیں توانائی سیکٹر میں سرمایہ کاری کرنے میں ناکام رہیں ہیں۔

ذرائع کے مطابق کابینہ اجلاس میں دانیال عزیز کے آئی سی آئی جے کو لکھے گئے خط کے جواب پر اطمینان کا اظہارکیا گیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ آئی سی آئی جے نے ہماری بے گناہی پر تصدیق کی مہر لگا دی ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم نےوفاقی وزرا کو عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی صوبے کو نظر انداد نہ کیا جائے۔ ترقیاتی سکیموں میں تمام صوبوں کو برابر ترجیح دی جائے۔ اجلاس میں وفاقی کابینہ کے بیشتر ارکان کی جانب سے پانامہ لیکس پر وزیر اعظم کے موقف کی تائید کی گئی۔