احتساب عدالت میں  وکلاء اور پولیس کے درمیان ہونے والا ہنگامہ :  اصل حقائق منظر عام پر آ گئے

اسلام آباد (ویب ڈیسک )وکلا کو اجازت  ہونے کے باوجود کمرہ عدالت میں جانے نہیں دیا گیا ، وزارت داخلہ  کو آج کے واقعہ کی تحقیقات کروانی چاہیے: احتساب عدالت سے روانگی کے دوران گفتگو

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت کے گیٹ پر ہنگامہ آرائی پر مریم نواز نے ردعمل دیتے ہوئے کہا عدالت میں وکلا اور اہلکاروں کے درمیان جو کچھ ہوا افسوسناک ہے۔ انہوں نے کہا وکلا کو اجازت تھی لیکن عدالت کے اندر نہیں آنے دیا گیا، وزارت داخلہ آج کے واقعہ کی تحقیقات کرائے۔

مریم اورنگزیب نے کہا وکلا کو عدالت میں داخلے کا اجازت نامہ دیا گیا تھا، ایسے اقدامات کرنے چاہئیں کہ آئندہ ایسا نہ ہو، وزارت داخلہ معاملے کو دیکھ رہی ہے۔

وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری نے کہا آج کا واقعہ افسوس ناک ہے، واقع کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے تا کہ آئندہ ایسے واقعات نہ ہوں۔دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما عابد شیر علی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا وکلا برادری پر لاٹھیاں برسائی گئیں، یہ کون کروا رہا ہے، اس کی تحقیقات ہونی چاہئیں۔ انہوں نے کہا عدلیہ آزاد ہے، کسی کی اجارہ داری نہیں ہونی چاہیئے، وکلا کو کارروائی دیکھنے کا پورا حق ہے، آج کے واقعہ کی تحقیقات ہوں گی۔اور پھر سامنے آنا چاہیے کہ آخر یہ کون کروا رہا ہے (ذ،ع۔ع)