احتساب عدالت میں ہونیوالا  ہنگامہ :  رانا ثنا اللہ   نے ایسی وجہ بیان کر ڈالی کہ آپ   اپناسر پکڑ لیں گے

لاہور(ویب ڈیسک) آج احتساب عدالت میں ہونے والی بدنظمی پر وزیر قانون رانا ثناءاللہ  نے  اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیب ایک اوپن کورٹ ہے وہاں ہر کسی کو جانے کی اجازت ہونی چاہیے، بڑا کیس چل رہا ہے تو وہاں سیاستدان اور وکیل سب ہی جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کیفے ٹیریا میں میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ عدالت میں گنجائش کم ہو تو سماعت کسی بڑی جگہ پر منتقل کی جا سکتی ہے، ایک وکیل اوپن کورٹ میں جانے کا استحقاق رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ لاہور ہائی کورٹ بار 21 ہزار وکلا کی بار ہے چند لوگوں کو کسی کی ممبرشپ ختم کرنے کا اختیار نہیں ہے، اسلام آباد میں وکلا کو عدالت جانے سے روکا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ لاہور ہائیکورٹ بار کے صدر کا منصورہ سے بہت تعلق ہے جبکہ سیکریٹری ہائیکورٹ بار کا ظہور الہیٰ روڈ سے گہرا تعلق ہے۔

رانا ثناءاللہ نے کہا کہ کیپٹن(ر) صفدر کے بیان پر ڈی جی آئی ایس پی آر نے دو ٹوک انداز میں جواب دیا، ان کے جواب کے بعد اس پر بات کی گنجائش نہیں رہتی۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز ایک بیان مجھ سے منسوب کرنے کی کوشش کی گئی، بعض سیاسی مخالفین اور دیگر نے میرے بیان کو غلط طور پر پیش کیا۔

وزیر قانون پنجاب نے کہا کہ میں ایک راسخ العقیدہ مسلمان ہوں اور راسخ العقیدہ مسلمان ہونے کے ناطے ختم نبوت پر ایمان ہے۔ان کا کہنا تھا کہ آئین میں تمام اقلیتوں کے حقوق بھی واضح طور پر درج ہیں، ریاست نے ہمیشہ احمدیوں کو آئین کے مطابق جان و مال کا تحفظ فراہم کیاہے۔ہاکستان میں موجود تمام اقلیتوں کا ہر طرح کے حقوق دیے گئے ہیں (ذ،ع۔ع)