نوبل انعام میں آخر ملتا کیا ہے ؟

لاہور(ویب ڈیسک) آج کل آپ میڈیا پر 2017ء میں نوبل انعام جیتنے والوں کے نام سُن اور پڑھ رہے ہوں گے۔ ایسی خبریں پڑھتے ہوئے ہم سوچتے ہیں کہ اس انعام میں آخر کیا دیا جاتا ہے۔ یہ جاننے کے لئے سب سے پہلے نوبل انعام کی تھوڑی سی تاریخ جان لیتے ہیں۔

نوبل انعام کیا ہے؟

نوبل انعام کا بانی الفریڈ نوبل ہے جو 1833ء میں سویڈن میں پیدا ہوا تھا۔ الفریڈ نوبل ایک کیمیا دان، انجینئیر اور موجد تھا۔ اس نے ہی ڈائنامائٹ کوایجاد کیا تھا۔ 1864ء میں ایک فرانسیسی اخبار نے الفریڈ نوبل کی وفات کی غلط خبر چھاپ دی تھی۔ خبر کی سرخی یہ تھی ”موت کا تاجر مر گیا“۔ اصل میں اس دن نوبل کا چھوٹا بھائی اپنے باپ کی فیکٹری میں ایک کیمایئی تجربہ کرتے ہوئے جان کی بازی ہار گیا تھا۔ اخبار نویس نے اسے الفریڈ نوبل سمجھتے ہوئے اس کی موت کی خبر چھاپ دی تھی۔ جب الفریڈ نوبل نے یہ خبر پڑھی تو وہ ایک گہری سوچ میں ڈوب گیا۔ وہ اپنی موت کی خبر ایسے نہیں چاہتا تھا۔ اس نے اپنی زمینوں اور ڈائنامائٹ کے زریعے کمائی گئی دولت سے نوبل انعام کا سلسلہ شروع کرنے کا سوچا تا کہ اس کا نام رہتی دنیا تک قائم رہے اور ہمیشہ ایسے لوگوں کی حوصلہ افزائی ہوتی رہے جو دنیا کی فلاح و بہبود کے لئے نمایاں کارنامے سر انجام دیتے ہیں۔

 

موت سے قبل اس نے اپنی وصیت میں لکھ دیا تھا کہ اس کی یہ دولت ہر سال ایسے افراد یا اداروں کو انعام کے طور پر دی جائے جنہوں نے گزشتہ سال کے دوران میں طبیعیات، کیمیا، طب، ادب اور امن کے میدانوں میں کوئی نمایاں کارنامہ انجام دیا ہو۔ 1896ء میں جب اس نے وفات پائی تو اس کے بنک اکاؤنٹ میں 90 لاکھ ڈالر موجود تھے جو ابتدائی پانچ نوبل انعام کے لئے کافی تھی۔ اس کی وصیت کے مطابق اس کی موت کے فوراً بعد ایک فنڈ قائم کر دیا گیا تھا جس کے منافع سے ہر سال 10 دسمبر کو سٹاک ہوم، سویڈن میں منعقد ہونے والی ایک تقریب میں انعام یافتگان کو نوبل انعام دیا جاتا ہے۔ 1901ء میں پہلی بار نوبل انعام دیا گیا تھا اور یہ سلسلہ اب تک جاری ہے۔

نوبل انعام میں آخر کیا دیا جاتا ہے؟

نوبل انعام جیتنے والے کو ایک سونے کا میڈل، ایک ڈپلوما اور کچھ نقد رقم دی جاتی ہے۔ پچھلے سال انعام یافتگان کو 11 لاکھ ڈالر کی رقم دی گئی تھی جو پاکستانی کرنسی میں تقریباً ساڑھے گیارہ کروڑ روپے بنتی ہے۔ اگر کوئی انعام دو لوگوں میں تقسیم کیا جائے تو انعام کی رقم آدھی آدھی بانٹی جاتی ہے۔ اس انعام کےعلاوہ نوبل انعام یافتہ کہلانا ہی بہت بڑا اعزاز ہوتا ہے۔نوبل انعام یافتگان کو اپنا انعام وصول کرنے کے چھ ماہ کے اندر اندر ایک عوامی لیکچر دینا ہوتا ہے۔ انعام یافتگان کی زیادہ تعداد یہ لیکچر سٹاک ہوم میں منائے جانے والے نوبل ہفتے کے دوران دیتی ہے۔ اس ہفتے کے اختتام پر ان تمام لوگوں کے لئے ایک پارٹی کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے۔