دنیا کا وہ ملک جس کی فوج کا آئی کیو لیول ایک کتے سے بھی کم ہے

نئی  دہلی (ویب ڈیسک) بھارت دنیا کی چوتھی بڑی فوج کا حامل ایسا ملک ہے جو اسلحہ اور نفری کی بنیاد پر ترقی کا دعویٰ کرتاہے لیکن بھارتی فوج میں اعلٰی ذہانتوں کا بدترین فقدان پایا جاتا ہے، یہی وجہ ہے کہ بھارتی سرکار نے فوجی افسروں اور جوانوں میں ذہانت کا معیار بڑھانے کی تگ و دو شروع کردی ہے اور اعلان کیا ہے کہ بھارتی فوج کے افسروں اور جوانوں کا آئی کیو لیول بڑھایا جائے گا کیونکہ ایک کتے کا آئی کیو لیول بھی پچاس سے ستر تک پہنچ چکا ہے ۔

تو پھر ٹیکنالوجی کے اس دور میں ذہنی پسماندگی کی حامل فوج کیونکر ہندوستان کے لئے فائدہ مند ہو سکتی ہے؟ اور کس طرح اس سے پیشہ وارانہ بہتری کی امیدیں رکھی جاسکتیں ہیں ؟ دوسری طرف بھارت دنیامیں اسلحہ کا ایک بڑا خریدار ملک ہے لیکن بھارتی فوجیوں میں اسکے استعمال کی صلاحیتیں مشکوک پائی جاتی ہیں جس کی وجہ سے مودی سرکار کو افسروں کی تربیت پر بھاری اخراجات اور امریکہ و اسرائیلی فوج کی خدمات بھی حاصل کرنا پڑتی ہیں۔امریکہ اور چین سمیت دوسرے ملکوں میں بھی فوجیوں کا آئی کیو لیول بڑھانے پر توجہ دی جارہی ہے تاکہ انکی افواج جدید دنیا کے ساتھ ہم آہنگ ہوسکیں ۔ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ اس وقت بعض جانوروں خاص طور پر ایک کتے کا آئی کیو لیول بھی پچاس سے ستر تک پہنچ چکا ہے اور ان سے اچھے ’’ملٹری ڈاگز ‘‘ کا کام لیا جارہا ہے تو فوجیوں کاآئی کیو لیول تو اس سے زیادہ ہونا چاہئے، دہشت گردی کی جنگ میں افواج کی ناکامی میں یہی خامی سامنے آئی ہے کیونکہ انکے مقابل دشمن زیادہ آئی کیو لیول رکھتا ہے۔ بھارت میں گزشتہ سال تک فوجیوں کی بھرتی کے دوران پچاس سے نوّے تک آئی کیو لیول رکھنے والوں کو بھرتی کیا جاتا رہا ہے، جبکہ عام ہندوستانیوں کا اوسطا آئی کیو ستر سے ایک سو دس تک پایا جاتا ہے، بھارتی سرکار کا کہنا ہے فوجیوں میں آئی کیو بڑھانے سے انکی پیشہ وارانہ صلاحیتوں میں اضافہ کیا جاسکے گا۔
بھارتی فوج گزشتہ سال سے آئی کیو لیول کو ترجیح دینے کے منصوبے پر عمل پیرا ہے اور اس نے ’’ نیو انڈین آرمی جنریشن‘‘ کا نعرہ بلند کرتے ہوئےدعویٰ کیا ہے کہ 2019 میں بھارتی فوج میں افسروں کی جو کھیپ مہیا کی جائے گی وہ نئے دور کی فوج ہوگی ۔واضح رہے کہ بھارت فوج میں بھرتی کا بنیادی ڈھانچہ تبدیل کرتے ہوئے گزشتہ 70 سالوں کے معیارات کو ترک کرنا چاہتا ہے جس کے تحت پہلے فوجی جوانوں اور افسروں کی بھرتی کے لئے پچاس سے 90 تک آئی کیو لیول رکھنے والے لوگوں کو ہی بھرتی کیا جاتا تھاجو ’’ عام و خاص کتے ‘‘ کے آئی کیو لیول کے برابرتھا اور اس پر بھارتی فوج اور حکومت کو اپنی اور دانشوروں کی جانب سے شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔(ش س م۔ ن)

 
Loading...